پشاور میں کورونا کا مشتبہ مریض فرار ہو گیا

0 72
ا پشاور (یواین پی) پاکستان کے صوبہ خیبرپختونخوا کے دارالحکومت پشاور کے خیبر ٹیچنگ اسپتال سے کورونا وائرس کا مشتبہ مریض بھاگ نکلا ہے۔اسپتال انتظامیہ نے یونیورسٹی ٹاؤن تھانے کو لکھے مراسلے میں مشتبہ شخص کو ڈھونڈنے کے لیے مدد طلب کی ہے۔مراسلے کے مطابق دلہ ذاک روڈ کا رہائشی خیبر ٹیچنگ میں زیر علاج تھا۔اس کے کورونا ٹیسٹ رزلٹ کا انتظار ہے جو دوسرے افراد کو بھی متاثر ہو سکتا ہے۔جس کے بعد اب خیبر پختونخوا پولیس کو فرار مشتبہ مریض کی تلاش ہے۔گذشتہ روز چار نئے کیسز سامنے آنے کے بعد خیبرپختونخوا میں کرونا مریضوں کی تعداد 23 پر پہنچ گئی تھی۔ سول سیکرٹریٹ کے لان میں سیکرٹری ہیلتھ کے ہمراہ پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے وزیراعلیٰ کے مشیربرائے اطلاعات خیبر پختونخوا اجمل وزیر نے کہا کہ ہ صوبے میں پندرہ مزید کیسز سامنے آنے سے متعلق خبر بے بنیاد ہے، کوئی بھی ڈیپارٹمنٹ خبر دے وہ انفارمیشن ڈیپارٹمنٹ سے ضرور کنفرم کریں، ٹوٹل مشتبہ افراد کی تعداد 92 ہیں جن میں 43 کا رزلٹ ابھی پینڈنگ ہے، کل تک ٹوٹل 19 تھے جن میں بیماری سے فوت ہونے والے دو افراد بھی شامل ہیں، چار نئے کیسز سامنے آنے کے بعد صوبے میں کرونا مریضوں کی تعداد 23 پر پہنچ گئی۔مشیر اطلاعات نے مثبت آنے والے چار کیسوں کی تفصیل بتاتے ہوئے کہا کہ ایک مریض کا تعلق مانسہرہ سے ہے جو کرونا سے متاثرہ شخص کا بھائی ہے دوسرے شخص کا تعلق ضلع خیبر سے ہے جس کی عمر 30 سال ہے، تیسرا کیس بونیر میں سامنے آیا ہے جسکی عمر 25 سال ہے اور صوبے میں کرونا سے متاثرہ پہلی خاتون ہے اور چوتھا کیس چارسدہ کے شبقدر کے علاقے میں سامنے آیا ہے جس کی عمر 30 سال ہے اور ڈی ایچ کیو چارسدہ میں زیر علاج ہے۔مزید زائرین کی آمد بارے مشیر اطلاعات نے بتایا کہ دو سو پچاس کے لگ بھگ مزید زائرین نے بلوچستان سے ہمارے صوبے میں آنا ہے جن کو ڈی آئی خان میں واقع قرنطینہ میں رکھا جائیگا۔ وزیر اعلی محمود خان آج خود ڈی آئی خان گئے اور کرونا کے روک تھام کیلئے قرنطینہ میں کئے جانے والے انتظامات کا جائزہ لیا۔ اجمل وزیر نے میڈیا نمائندوں کو بتایا کہ جو فیصلے ہم نے کئے ان پر من و عن عملدرآمد کیا جائیگا ہم 24 گھنٹے تین شفٹ میں کام کر رہے ہیں تاکہ لمحہ بہ لمحہ کی صورتحال سے صحافی برادری اور عوام کو آگاہ رکھا جاسکے۔
Facebook Comments