افواہیں حقیقت میں بدلنے لگیں!!!

0 175

کراچی (ویب ڈیسک)اے آروائی نیوز کے مالک سلمان اقبال کا کہنا ہے کہ کورونا کی وجہ سے جو صورتحال پیدا ہوچکی ہے اس میں خطرہ ہے کہ 30 سے 40 فیصد ٹی وی چینلز بند ہوجائیں گے۔ سوشل میڈیا پر سامنے آنے والی ایک ویڈیو کال کی ریکارڈنگ میں اے آر وائی کے سی ای او سلمان اقبالکو میڈیا بحران کے حوالے سے بات کرتے ہوئے سنا جاسکتا ہے۔سلمان اقبال نے کہا کہ کورونا کی وجہ سے دنیا کے اندر جتنے کاروبار ہیں وہ ڈسٹرب ہوئے ہیں۔ میڈیا بحران کے دوران ہم نے لوگوں کو نکالا نہیں بلکہ اضافی سٹاف کو نکالا ، یہ ایسے لوگ تھے جو انٹرن شپ کرنے آئے اور کسی طرح اپنی پکی جگہ بنالی۔ تنخواہیں کم کرنے کی بات ہوئی لیکن ہم نے کسی کی تنخواہیں کم نہیں کیں، ہم نے یہ وزن اٹھالیا لیکن اب یہ وزن اٹھایا نہیں جارہا ۔انہوں نے بتایا کہ ٹیلی ویژن میڈیا میں باقی انڈسٹری سے زیادہ تنخواہیں ہیں، پہلے بینکنگ میں زیادہ تنخواہیں تھیں لیکن اب میڈیا انڈسٹری اس کو پیچھے چھوڑ چکی ہے۔ ” ہمیشہ کہتا ہوں کہ اندھے مامے سے کانا ماما بہتر ہوتا ہے، اگر یہی حالات چلتے رہے تو 30 سے 40 فیصد چینلز بند ہوجائیں گے، اگر چینلز بند ہوں گے تو نوکریاں ختم ہوں گی اس لیے اگر کوئی مالک عارضی طور پر تنخواہیں کم کرنے کی بات کرے تو یہ تجویز مان لینی چاہیے تاکہ چینلز بند نہ ہوں۔” جبکہ دوسری جانب ایک خبر کے مطابق وزیر اعظم کے قریبی ساتھی سینیٹر فیصل جاوید خان کا کہنا ہے کہ وزیراعظم عمران خان جیوانٹرٹینمنٹ اور جیوکہانی پرٹیلی تھون میں براہ راست عوام سےعطیات اکٹھےکریں گے۔فیصل جاوید خان نے بتایا کہ وزیراعظم کیلئےتاریخ کےسب سےبڑےٹیلی تھون کی تیاریاں حتمی مراحل میں داخل ہوگئی ہیں، عمران خان 23 اپریل سہ پہر 4 بجے براہ راست عوام سےعطیات وصول کریں گے، عوام ٹیلی تھون کی براہ راست نشریات جیوانٹرٹینمنٹ اورجیوکہانی پردیکھ پائیں گے۔انہوں نے بتایا کہ ملک بھرسے مخیر حضرات کی کثیرتعدادٹیلی تھون کا حصہ بنے گی، دنیابھر میں موجود پاکستانیوں کوٹیلی تھون میں شرکت کی خصوصی دعوت دیتےہیں۔ انہوں نے امید ظاہر کی کہ بیرون ملک سےپاکستانیوں کی بڑی تعدادوزیراعظم کی اپیل پرکوروناریلیف فنڈمیں حصہ ڈالےگی۔سینیٹر فیصل جاوید کا کہنا تھا کہ ٹیلی تھون میں شریک افرادنیشنل بینک کراچی میں موجوداکاؤنٹ میں عطیات بھجوائیں گے۔

Facebook Comments