پرائیویٹ سکولز ایسوسی کے عہدیداران کا شدید احتجاج ہنگامی پریس کانفرنس

0 200

ہنگو(بیورورپورٹ)کورونا وائرس وباء سے پرائیویٹ تعلیمی ادارے بدستور بند۔2 ماہ سے نجی تعلیمی اداروں کی بندش کے باعث تعلیمی بدحالی سمیت ہزاروں اساتذہ نے روزگار۔پرائیویٹ سکولز ایسوسی کے عہدیداران کا شدید احتجاج ہنگامی پریس کانفرنس۔5 جون تک تعلیمی ادارے SOPS کے تحت نہ کھولنے کی صورت میں صوبائی سطح پر احتجاج کا فیصلہ جمعہ کے روز پرائیویٹ سکولز ایسوسی ایشن ہنگو کے عہدیداران صوبائی وائس پریزیڈنٹ اسلام بہادر اور دیگر عہدیداران خدا یار خان،حسین خان،نعیم خان سعید قریشی اور دیگر نے احتجاجی کے بعد ازاں پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کہاکہ کارونا صورتحال سے نجی تعلیمی اداروں سے وابستہ ایک لاکھ 50 ہزار سے زائد اساتذہ اور عملہ بے روزگار ہوکر فاقہ کشی پر مجبور ہے جبکہ خیبر پختونخواہ میں 29 ہزار نجی تعلیمی ادارے 2 ماہ سے بند اور کروڑوں بچوں کا تعلیمی مستقبل داو پر لگا ہوا ہے مقررین نے کہاکہ نجی سکولز مالکان تعلیمی اداروں کے بلڈنگز کے کرایوں کی ادائیگی تک برداشت کرنے کی سقط نہیں رکھتے انہوں نے کہاکہ صوبائی حکومت نے پبلک ٹرانسپورٹ تجارتی سرگرمیوں سمیت مختلف شعبوں کو جاری کردہ ایس او پیز کے تحت کھولنے کی اجازت دے رہی ہے مگر پرائیویٹ تعلیمی اداروں کو بارہا تحریری مطالبات کے باوجود کھولنے کی اجازت نہیں دی جارہی ہے انہوں نے خبردار کیاکہ اگر 5 جون 2020 تک حکومتی ایس او پیز کے تحت نجی تعلیمی ادارے کھولنے کا نوٹیفیکشن جاری نہیں کیا گیا تو وفاق المدارس کی ساتھ ملکر آئندہ لائحہ عمل کے تحت صوبائی سطح پر احتجاج ریکارڈ کرایا جائیگا۔

Facebook Comments