درہ آدم خیل کیلئے آبپاشی کے پانچ کروڑ روپے کے منصوبوں کا اعلان

آفریدی قوم کے چھ قبیلوں کیلئے پانچ نئے ٹیوب ویل لگانے کے ساتھ دو ٹیوب ویل کو سولرائز بھی کیا جائے گا۔لیاقت خٹک

0 140

پشاور(جنرل رپورٹر)خیبرپختونخوا کے وزیر آبپاشی لیاقت خٹک نے درہ آدم خیل کے دورے کے موقع پر پانچ کروڑ روپے کے منصوبوں کااعلان کرتے ہوئے کہا کہ درہ آدم خیل کے آفریدی قوم کے چھ قبیلوں کے لئے پانچ نئے ٹیوب ویل لگائیں جائیں گے جبکہ پہلے سے موجود دوٹیوب ویلز کو سولرائز کرائینگے۔ صوبائی وزیر نے کہا کہ عوامی رسائی مہم میں درہ آدم خیل کے ترقیاتی منصوبوں پر عوامی رائے لینے آیا ہوں۔ ترقیاتی منصوبوں کے حوالے سے منعقدہ تقریب میں قبائلی مشران، صحافی، پارلیمنٹرینز، لائن ڈیپارٹمنٹ اور ضلعی انتظامیہ کے عہدیداران نے شرکت کی۔ لائن ڈیپارٹمنٹ اور ضلعی انتظامیہ نے صوبائی وزیر کو درہ آدم خیل میں جاری ترقیاتی سکیموں کے بارے میں بریفنگ دی۔ اس موقع پر قبائلی مشران نے  بجلی، تعلیم،صحت اور پینے کے پانی کے مسائل کے بارے اظہار رائے کیا اور مطالبہ کیا کہ حکومت انکے جلد حل کرنے کے لئے ٹھوس اقدامات اٹھائیں۔  تقریب سے خطاب کرتے ہوئے وزیر آبپاشی نے کہا کہ وزیراعلی قبائلی اضلاع کو صوبے کے دیگر اضلاع کے برابر لانا چاہتے ہیں۔ اور عوامی رسائی مہم کے تحت مقامی عوام کے مسائل کی شنوائی ہوگی۔ انہوں نے مزید کہا کہ صوبائی حکومت قبائلی اضلاع کے مسائل سے باخبر ہے تاہم ہماری حکومت مسائل عوام کی خواہشات کے مطابق حل کرنا چاہتی ہے۔ پہلے سے جاری منصوبوں کے علاوہ، عوام کی نشاندہی پرمزید سکیموں کو بھی منظور کرائینگے۔ لیاقت خٹک نے  آبپاشی کے پانچ کروڑ روپے کے منصوبوں کا اعلان کیا جس میں پانچ نئے اور دو پہلے سے موجود ٹیوب ویلوں کو سولرائز کیا جائیگا۔ صوبائی وزیر نے کہا کہ اگلے دس سال میں ایک ہزار ارب ضم شدہ اضلاع کی ترقی پر خرچ ہونگے قبائلی عوام کے تعاون سے ترقی کا سفر دس سال کی بجائے پانچ سال میں پورا کرینگے۔ صوبائی وزیر نے کہا کہ قبائلی عوام سے کیے گئے وعدوں کو ہر صورت پورا کرینگے۔ آخر میں وزیر آبپاشی نے قبائلی عوام میں صحت انصاف کارڈ تقسیم کئے اور کہا کہ اس کارڈ سے غریب عوام کو سات لاکھ روپے تک علاج سرکاری و غیر سرکاری ہسپتالوں میں مفت فراہم ہوگا۔ صوبائی وزیر نے کہا کہ مقامی صحافی اور میڈیا عوامی مسائل کی نشاندہی اور عوامی رسائی مہم کی تشہیر میں کردار ادا کریں۔ تاکہ ضم شدہ اضلاع میں ترقیاتی منصوبے بروقت مکمل کئے جاسکیں۔

Facebook Comments