کے پی کے حکومت نے موسلا دھار بارشوں کے باعث موسمیاتی ایمرجنسی نافذ کردی

0 134
پشاور (یواین پی) خیبر پختونخوا حکومت نے موسلا دھار بارشوں اور طوفان کے باعث موسمیاتی ایمرجنسی نافذ کردی ہے۔ تفصیلات کے مطابق خیبر پختونخواہ میں بارش کے باعث مختلف حادثات میں 17 افراد جاں بحق اور 38 زخمی ہوچکے ہیں جس کے بعد صوبائی حکومت نے موسمیاتی ایمرجنسی نافذ کردی ہے۔ صوبائی ڈیزاسٹر منیجمنٹ اتھارٹی (PDMA) نے ہفتے کو جاری کردہ اپنی رپورٹ میں کہا ہے کہ کم از کم 57 مکانات گر گئے ہیں اور زیادہ تر اموات گھروں کے گرنے کے واقعات کی وجہ سے ہوئی ہیں۔آئندہ سات روز تک جاری رہنے والی سردی کی لہر کے دوران شہریوں کو پناہ اور خوراک مہیا کرنے کے لئے صوبائی حکومت نے نیشنل ڈیزاسٹر منیجمنٹ اتھارٹی (این ڈی ایم اے) نے 2010 ایکٹ کے سیکشن 16 (اے) کے اختیار کو استعمال کرتے ہوئے 7 مارچ سے 14 مارچ تک ہنگامی صورتحال کا اعلان کیا ہے۔ہنگامی صورتحال کے دوران ڈپٹی کمشنرز کو ہدایت کی گئی ہے کہ وہ تیز بارش، شدید برف باری اور درجہ حرارت میں کمی سے متاثرہ علاقوں میں عارضی طور پر پناہگاہیں دوبارہ چالو کریں۔محکمہ موسمیات نے ہفتے کے روز بتایا کہ صوبائی دارالحکومت، خیبر، چارسدہ، مہمند، نوشہرہ، صوابی مردان، ہری پور، ایبٹ آباد، مانسہرہ، بٹگرام، تورغر، کوہستان اور شانگلہ میں وسیع و تیز ہواوں اور گرج چمک کے ساتھ بارش کا امکان ہے۔ سوات، بونیر، ملاکنڈ، اپر اور لوئر دیر، باجوڑ، چترال، کوہاٹ، ہنگو، اورکزئی اور کرم کے اضلاع جبکہ کرک، بنوں، لکی مروت، شمالی وزیرستان، ڈی آئی میں بھی مختلف مقامات پر بارش اور برف بار کا امکان ہے۔دوسری جانب بالائی علاقوں میں گیس اور جلانے کی لکڑی کی طلب میں بھی اضافہ ہوگیا ہے۔انتظامیہ نے عوام کی سہولت کے لیے جلانے کی لکڑی کی فی من قیمت 800 جبکہ گیارہ کلو ایل پی جی گیس سلنڈر کی قیمت 2200 روپے مقرر کر رکھی ہے۔اس حوالے سے ڈپٹی کمشنر غذر محمد طارق نے کہا ہے کہ گیس اور لکڑی کی مقررہ قیمتوں سے زیادہ رقم لینے والے تاجروں کے خلاف سخت کارروائی ہوگی۔
Facebook Comments