اہم ترین اسلامی ملک میں صرف 3نمازیوں کو تراویح کی اجازت

0 198

قاہرہ (ویب ڈیسک) مصرکی وزارت اوقاف اور مذہبی امور نے قاہرہ کے مشرقی علاقے میں موجود تاریخی مسجد عمرو بن العاص میں خصوصی طور پر صرف تین نمازیوں کو تراویح کی اجازت دی ہے۔ذرائع کے مطابق تاریخی مسجد کے لیے دی گئی اس اجازت میں امام مسجد کے علاوہ دو ملازم شامل ہو سکتے ہیں۔وزارت مواصلات قرآن کریم ریڈیو کے تعاون سے تراویح براہ راست نشر کرے گی۔مصری وزارت اوقاف کا کہنا ہے کہ رمضان کی روحانی مناسبت اور کورونا کی وبا کے خطرات کے پیش نظر تاریخی مسجد عمرو بن العاص سے صرف تین افراد امام مسجد اور دو دیگر ملازمین کو تراویح کی نماز ادا کرنے کی اجازت دی گئی ہے۔ کورونا وائرس پھیلنے کے خطرات کو روکنے کے لیے مصرکی تمام مساجد میں با جماعت نمازوں کی ادائیگی پرپابندی عاید ہے۔ دوسری جانب پرتگال کی حکومت نے ملک میں کورونا وائرس کے باعث نافذ ہنگامی صورتحال اٹھا لی ہے جبکہ لاک ڈاون میں بھی نرمی کردی گئی ہے۔برطانوی نشریاتی ادارے کے مطابق ملک میں کورونا وائرس سے اب تک 1043 افراد ہلاک ہوئے ہیں جبکہ کورونا متاثرین کی تعداد 25282 ہے۔پرتگال میں مارچ کے وسط سے ہنگامی صورتحال نافذ ہے لیکن اب وہاں ایک کروڑ کی آبادی میں ایک ہزار سے زائد اموات کے بعد لاک ڈاون میں نرمی کی جا رہی ہے۔ پرتگال میں پیر سے چھوٹی دکانوں کو کاروبار کی اجازت دےدی گئی ہے تاہم بڑی دکانوں کو یکم جون تک انتظار کرنا پڑے گا۔ ملک میں 18 مارچ کو ہنگامی صورتحال کا نفاذ کیا گیا تھا۔ کورونا وائرس کو روکنے کے لیے لاک ڈاون کے دوران تمام غیر ضروری خدمات کو بند کردیا گیا تھا۔ پرتگال کے پڑوسی ملک سپین میں مہلک کورونا وائرس سے اب تک 25 ہزار سے زائد افراد ہلاک ہوچکے ہیں۔ یہ امر قابل ذکر ہے کہ پرتگال نے ہنگامی صورتحال کے نفاذ سے پہلے ہی سکول اور نائٹ کلبز بند کردیئے تھے اور بڑے اجتماعات پر پابندی لگادی تھی۔ حکام نے کورونا وائرس کے پھیلاﺅ کو روکنے کے لئے اٹلی جانے والی پروازوں اور سپین کے ساتھ سیاحت کو معطل کردیا تھا۔

Facebook Comments