انسپکٹرجنرل آف پولیس خیبر پختونخوا کا دورہ ڈیرہ اسماعیل خان ریجن

0 177

پشاور (اے پی پی)انسپکٹرجنرل پولیس خیبرپختونخوا ڈاکٹر ثنااللہ عباسی ڈیرہ اسماعیل خان ریجن کے دورے پر ڈیرہ اسماعیل خان پولیس لائنز پہنچے۔ پولیس لائنز پہنچنے پر ڈی آئی جی ڈیرہ اسماعیل خان امتیاز شاہ، ڈی پی او ڈی آئی خان قاری واحد محمود اور ڈی پی او ٹانک محمد عارف، ڈیرہ اسماعیل خان ریجن کے دیگر پولیس افسران اور پولیس شہدا کے بچوں نے آئی جی پی خیبرپختونخوا کو خوش آمدید کہا۔ ڈی آئی خان پولیس کے چاک و چوبند دستے نے آئی جی پی خیبرپختونخوا کو سلامی پیش کی۔ آئی جی پی نے یادگار شہدا پر حاضری دی، پھول چڑھائے اور شھدا کی بلندء درجات کیلئے فاتحہ خوانی کی۔انہوں نے پولیس شہدا کے بچوں میں تحائف بھی تقسیم کئے۔اس کے بعد آئی جی پی نے نیشنل بینک کے تعاون سے آر پی او آفس ڈیرہ اسماعیل خان میں کلین اینڈ گرین پاکستان مہم کے تحت پودا لگا کر بینک کی طرف سے دس لاکھ کے عطیہ کئے گئے پودوں کی شجر کاری کا افتتاح کیا۔ بعد میں آئی جی پی نے ڈی آئی خان ریجن کے اعلی پولیس حکام کے اجلاس کی صدارت کی۔ جس میں ڈیرہ اسماعیل خان ریجن کے آر پی او،ڈی پی او ڈی آئی خان، ڈی پی او ٹانک، ایس پی سپیشل برانچ،ایس پی ایف آر پی،ایس پی انوسٹی گیشن اور ایس پی سی ٹی ڈی شریک تھے۔ ریجن میں امن و آمان کے حوالے سے آئی جی پی کو بریفنگ بھی دی گئی۔ آئی جی پی ڈاکٹر ثنااللہ عباسی نے پولیس دربار سے خطاب کیا۔ دربار میں فورس کی مختلف یونٹوں اور شعبہ جات کے ہر رینک کے افسروں اور جوانوں نے بڑی تعداد میں شرکت کی۔ آئی جی نے دربار کے شرکاء پر زور دیا کہ وہ لوگوں کے ساتھ اچھا رویہ اپنائیں پہلے سلام پھر کلام پر عمل پیرا ہوکر خوش اخلاقی سے لوگوں کے دلوں میں جگہ بنائیں۔ آئی جی پی نے کہا کہ تھانہ میں تعینات محرر، ٹریفک اہلکار اور چیک پوسٹوں پر ڈیوٹی انجام دینے والوں کا عوام سے رویہ مثالی ہونا چاہیئے۔ آئی جی پی نے سینئر پولیس افسر وں کو بھی ہدایت کی کہ وہ اپنے دروازے اپنے ماتحتوں اور عوام کیلئے ہر وقت کھلے رکھیں اور ان کیلئے آسانیاں پیدا کرتے ہوئے ان کو درپیش مسائل اور مشکلات کے حل کیلئے ترجیحی بنیادوں پر اقدامات اٹھائیں۔ پولیس دربار میں افسروں و جوانوں نے آئی جی پی کو اپنے انفرادی اور اجتماعی مسائل پیش کئے۔ آئی جی پی نے انکے تمام معروضات توجہ سے سننے کے بعد مسائل کے حل کیلئے موقع پر احکامات جاری کئے جبکہ چند ایک پر متعلقہ حکام سے ضروری رپورٹ طلب کرکے انکے حل کا بھی یقین دلایا۔ پولیس دربار سے خطاب کرتے ہوئے انہوں نے کہا صوبائی حکومت کی طرف سے باقاعدہ نوٹیفکیشن جاری ہونے کے بعد اب لیویز اور خاصہ دار پولیس فورس کا حصہ ہیں اور قبائلی اضلاع کی پولیس کو دیگر اضلاع کے برابر مراعات ملیں گی۔ آئی جی پی نے کہا کہ 2020کو پولیس کنسٹیبلری کے سال کے طور پر منایا جائے گاجس میں پولیس اہلکاروں کی رہائش، پروموشن،فلاح و بہبود، شہداکے بچوں کو بھرتی کرنااور دیگر مراعات وغیرہ پر خصوصی توجہ دی جائے گی۔ دربار کے اختتام پر بڑے کھانے کا اہتمام کیا گیا تھا جس میں آئی جی پی نے جوانوں کے ساتھ کھانا بھی کھایا۔ آر پی او اور ڈی پی او ڈی آئی خان نے آئی جی پی کو سوونیئر پیش کئے۔ انسپکٹر جنرل نے میڈیا ٹاک بھی کی۔اس دوران آئی جی پی نے کہا کہ خیبر پختونخوا پولیس کے ساتھ دیگر قانون نافذ کرنے والے ادروں کے تعاون سے شہروں میں رونقیں بحال ہو ئی ہیں،دہشت گردی، ڈرگ مافیا اور جرائم پیشہ افراد کے چنگل سے نجات ملی ہے۔

Facebook Comments