میں پہلا وزیراعلیٰ ہوں جس کو ضم شدہ قبائلی اضلاع سمیت پہلی بار ایک بڑا صوبہ ملا ہے،محمود خان

0 147

پشاور{نمایندہ خصوصی} وزیر اعلیٰ کا اپر دیر میں کیڈٹ کالج کے قیام کو اگلے اے ڈی پی میں شامل کرنے کا اعلان،میگاواٹ بجلی ویلینگ کے ذریعے مقامی صنعتوں کو دیں گے۔ وزیر اعلیٰ کا تیمر گرہ تحصیل ہیڈکوارٹر ہسپتال کو کیٹگری بی میں اپ گریڈ کرنے کا اعلان، لوئر دیر میں میڈیکل کالج کو جلد فعال بنائیں گے جبکہ یونیورسٹیزکو مزید بہتر کریں گے ۔ وزیر اعلیٰ کا چکدرہ بیوٹیفکیشن منصوبے کا بھی اعلان کیا۔جلسے سے خطاب کرتے ہوے وزیراعلی محمود خان نے کہاکہ ۔اسلام اور پاکستان کے بارے میں پوری دُنیا میں غلط اور منفی تاثر پایا جاتا تھا۔پچھلی حکومتوں نے پی آئی اے ، سٹیل مل، ایئر پورٹس و دیگرملکی ادارے گروی رکھے تھے۔تحریک انصاف کی حکومت بھی قرضے لیکر عوام پر بوجھ ڈال سکتی تھی، لیکن وزیراعظم نے سخت فیصلے کئے۔عمران خان نے ملک کی تاریخ میں پہلی مرتبہ یو این جنرل اسمبلی جیسے فورم پر مسئلہ کشمیر ، سیرت النبی، اسلام اور پاکستان کو اُجاگر کیا۔معیشت جلدٹھیک ہونے جارہی ہے ، ابھی تک پچھلی حکومتوں کے قرضے اُتاررہے تھے ۔عوام نے گھبرا نا نہیں، عمران خان کی قیادت میں سخت حالات جلد گزر جائیں گے ۔ کسی کے خلاف بات کرنے کی عادت نہیں لیکن جب کوئی بات کرتا ہے تو پھر اینٹ کا جواب پتھر سے ملے گا۔ وزیراعظم کا احساس پروگرام خالصتاً غریبوں اور ناداروں کیلئے ہے۔عمران خان غریبوں کی بہتری کیلئے سوچتا ہے اورصوبے میں اس سوچ کو عملی جامہ پہنانا میراکام ہے۔صوبے کی تاریخ میں پہلا وزیراعلیٰ ہوں جس کو ضم شدہ قبائلی اضلاع سمیت پہلی بار ایک بڑا صوبہ ملا ہے۔ ہماری حکومت میں جوبھی ترقیاتی کام ہونے جارہے ہیں، اس کو پوری دُنیا دیکھے گی ۔صوبے میں بیروزگاری کا خاتمہ صنعتکاری کے ذریعے کریں گے ۔وزیراعلیٰ خیبرپختونخوا واحد صوبہ ہے جو بچوں کے تحفظ کیلئے قانون سازی و دیگر اقدامات کر رہی ہے۔ یقین دلاتا ہوں کہ بچوں سے زیادتی کرنے والوں کو عبرتناک سزا دلائیں گے۔

Facebook Comments