جنسی ہراسگی میں ملوث گومل یونیورسٹی ڈی آئی خان کے 4 ملازمین نوکری سے برخاست

0 114
پشاور(اے پی پی)گورنر خیبر پختونخوا شاہ فرمان کی ہدایت پر گومل یونیورسٹی میں مالی بے ضابطگیوں اور جنسی ہراسمنٹ سے متعلق قائم کی گئی انکوائری کمیٹی کی سفارشات پر جنسی ہراسگی میں ملوث گومل یونیورسٹی ڈی آئی خان کے 4 ملازمین کو نوکری سے برخاست کر دیا گیا ہے جس کا باقاعدہ اعلامیہ جاری کر دیا گیا ہے، اعلامیہ کے مطابق جنسی ہراسگی کے مرتکب ملازمت سے برخاست کئے جانے والے ملازمین میں پروفیسر ڈاکٹر بختیار خان، اسسٹنٹ پروفیسر عمران قریشی، حکمت اللہ گیم سپروائزر اور حفیظ اللہ لیبارٹری اٹینڈنٹ شامل ہیں، واضح رہے کہ گورنر خیبر پختونخوا کی ہدایت پر ڈائریکٹر ایڈمنسٹریشن دلنواز خان کی معطلی کا اعلامیہ پہلے ہی جاری کر دیا گیا تھا کہ جبکہ نجی ٹی وی پر حالیہ ایک رپورٹ نشر ہونے کے بعد چیئرمین شعبہ اسلامیات پروفیسر ڈاکٹر صلاح الدین سے بھی استعفی لے لیا گیا تھا، گورنر خیبر پختونخوا نے تمام یونیورسٹیوں کو واضح پیغام دیا ہے کہ وہ اپنا نظام ٹھیک کریں، طلبا کے مستقبل پر کسی صورت سمجھوتا نہیں کیا جائے گا اور اعلی تعلیمی ادارے میں جنسی ہراسگی اور مالی بے ضابطگیوں میں ملوث عناصر کو کسی صورت معاف نہیں کیا جائے گا۔
Facebook Comments