مولانا طارق جمیل سے معافی منگوانے والے اینکر حامد میر سے ’’ معافی ‘‘کا مطالبہ ٹویٹر پر ٹاپ ٹرینڈ بن گیا

0 163

اسلام آباد (ویب ڈیسک) پاکستان کے معروف مذہبی سکالر اور عالم دین مولانا طارق جمیل سے معافی منگوانے والے اینکر حامد میر سے معافی کا مطالبہ ٹویٹر پر ٹاپ ٹرینڈ بن گیا حال ہی میں وزیر اعظم عمران خان کی احساس ٹیلی تھون کی لائیو نشریات میں پاکستان سمیت پوری دنیا سے لوگ شریک ہوئےاور دل کھول کر عطیات دئیے جمعرات کو وزیراعظم ہاؤس میں کورونا ریلیف فنڈ کے حوالہ سے ملکی تاریخ کی سب سے بڑی احساس ٹیلی تھون میں وزیراعظم عمران خان بھی موجود تھے۔ ملک کے مختلف چینلز سے وابستہ اینکرز بھی ٹیلی تھون میں شریک تھے۔ اس موقع پر اندرون و بیرون ملک سے بڑی تعداد میں مخیر حضرات نے وزیراعظم کے کورونا ریلیف فنڈ کیلئے کروڑوں روپے کے عطیات کا اعلان کیا۔نشریات کے اختتام پر معروف مذہبی سکالر مولانا طارق جمیل نے عوام سے اس وبا سے احتیاط برتنے اور خدا کے حضور توبہ کرنے کی تلقین کی۔ مولانا طارق جمیل نے دعا سے قبل خطاب بھی کیا جس میں ایک بیان میں مولانا طارق جمیل نے اپنے بیان میں کہا کہ میڈیا پر جھوٹ بولا جاتا ہے ہم جھوٹی قوم ہیں ہم اس جھوٹ کے ساتھ اللہ کی بارگاہ میں کوئی مقام نہیں لے سکتے۔ 22 کروڑ عوام میں کتنے لوگ سچے ہیں.؟. مولانا طارق جمیل نے ایک مثال دیتے ہوئے کہا کہ ایک بار مجھ سے ایک چینل کے مالک نے نصیحت مانگی۔ میں نے کہا اپنے چینل سے جھوٹ ختم کردو۔تو اس نے کہا کہ چینل ختم ہو سکتا ہے جھوٹ ختم نہیں ہو سکتا۔صرف پاکستان ہی نہیں پوری دنیا کا میڈیا جھوٹا ہے۔سب سے زیادہ جھوٹ میڈیا پر بولا جاتا ہے مولانا کے اس بیان پر تمام اینکرز سیخ پا تھے دو تین دن سے سوشل میڈیا پر اس بات پر بحث جاری تھی تو میڈیا کے اس سخت ری ایکشن پرمولاناطارق جمیل دودن قبل محمد مالک کے پروگرام میں آئے اور انہوں نے آتے ہی کہا میں میڈیا سے اپنی اس بات پر معافی مانگتا ہوں۔ مولانا طارق جمیل کے معافی مانگنے کے بعد حامد میر نے ٹویٹر پر ٹویٹ بھی اینکر پرسن اپنی ٹویٹ میں لکھا کہ مولانا طارق جمیل نے وزیراعظم ہاؤس میں ہونے والی ٹیلی تھون کے دوران میڈیا پر جھوٹبولنے کا الزام لگایا تھا جس پر ان سے ثبوت مانگے گئے تھے 24 گھنٹے کے بعد آج شام انہوں نے مجھ سمیت تمام میڈیا سے معافی مانگ لی ہے۔ حامد میر کی اس ٹویٹ کے سامنے آتے ہیں صارفین نے خوب تنقید کا نشانہ بنایا جبکہ دوسری جانب مولانا صاحب کی عزت اور احترام میں مزید اضافہ ہوا کہ انہوں نے بغیر کسی بحث کے غلطی پر نہ ہرنے کے باوجود معافی مانگی ہے لیکن یہ ایشو مسلسل سوشل میڈیا پر زیر بحث ہے اور ٹویٹر صارفین نے حامد میر پر شدید تنقید اور غم و غصے کا اظہار کرتے ہوئے مولا نا صاحب سے معافی مانگنے کا مطالبہ کیا ہے جبکہ آج ٹویٹر پرحامد میر معافی مانگوکا ٹرینڈ ٹاپ پر ہے۔ ایک صارف میاں اسامہ نے ٹویٹر پر پنجاب کے سابق وزیر اعلی شہباز شریف مولانا فضل الرحمن اور حامد میر کی فوٹو شئیرکرتے ہوئے لکھا کہ تاریخ ایک ایسے ملک کو یاد رکھے گی جہاں سچ کے پاس پاس کوئی ثبوت نہیں اور جھوٹ خود ثبوت ہے۔ محمد غلمن نامی صارف نے حامد میر اور محمد مالک کی تصاویر شئیر کیں جن کو سرخ رنگ میں کراس کیا گیا ہےاورلکھا شرم کرو۔ جنید خان نامی صارف مولانا طارق جمیل کی تصویر شئیر کی اور لکھا یہ آدمی سچی نعمت ہے نفرت کی بجائے محبت کو پھیلائیں۔ محمد سعد نامی صارف نے مولانا طارق جمیل کی تصویر اور ایک فرمان کا کولاج شئیر کیا جس پر لکھا تھا دلائل تو بہت تھے لیکن فرمان ہے جاہل سے بحث کرنے سے بہتر ہے معافی مانگ مانگ کر جان چھڑا لو–! اور کیپشن میں لکھا معاف کر دینا ہی بہترین جواب ہے۔

Facebook Comments