وزیر اعلی سند ھ نے ایسا کیا کہا کہ اجمل وزیر چپ نہ رہ سکے

0 140

مشیر اطلاعات وتعلقات عامہ اجمل خان وزیر نے کہا ہے کہ وزیر اعلی سندھ موجودہ وبائی صورتحال میں سیاست سے گریز کریں وزیر اعظم عمران خان ہر اجلاس میں وزیر اعلی سندھ کے تجاویز کو سنتے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ میڈیا پر چلنے والے صوبے میں 1100 زائرین کی غائب ہونے کی خبر میں کوئی صداقت نہیں ہے ایران سے آنے والے زائرین کو درازندہ، ڈیرہ اسماعیل خان اور دوران پور کے قرنطینہ سنٹر میں رکھا گیا تھا جو صحتیاب ہوکر گھروں کو چلے گئے ہیں صرف ایک مریض کا ٹیسٹ پازیٹیو آ رہا ہے جس کا علاج جاری ہے میڈیا بغیر تصدیق کے غلط خبریں نہ پھیلائیں۔ وہ اطلاع سیل سول سیکرٹریٹ پشاور میں میڈیا سے گفتگو کر رہے تھے۔ مشیر اطلاعات نے کہا کہ احساس پروگرام کے تحت شفاف طریقے سے عوام میں 12000 روپے امدادی رقوم کی تقسیم کا سلسلہ جاری ہے۔ احساس پروگرام کے بعد صوبائی ریلیف پیکج سے ان مستحقین میں یکمشت 6 ہزار روپے تقسیم کیے جائیں گے اور صوبائی زکوٰۃ فنڈ سے بھی ایک لاکھ مستحقین کی مدد کی جائے گی صوبے میں مستحقین تک یہ امدادی رقوم پہنچائینگے اور کسی نے بھی امدادی رقوم کی تقسیم میں مسائل بنائے تو ان کے خلاف کاروائی ہوگی۔ انہوں نے کہا کہ وبائی صورت حال ہونے کے باوجود قبائلی عوام کے ساتھ کئے گئے وعدے پورے کیے جا رہے ہیں اور وزیر اعلیٰ محمود خان نے جنوبی وزیرستان کے 3 ہزار 24 خاصہ دار کو پولیس میں ضم کرنے کی منظوری دے دی ہے اس انضمام سے رہ جانے والے خاصہ داروں کے لئے صوبائی حکومت آرڈننس لا رہی ہے جس کے باقی خاصہ دار بھی پولیس فورس کا حصہ بن جائیں گے۔ وزیر اعلیٰ نے پولیس شہداء کے 196 بچوں کو پولیس میں اے ایس آئی بھرتی کرنے کی بھی منظوری دے دی ہے۔ اجمل وزیر نے کہا کہ صوبے میں کورونا ٹیسٹنگ کی استعداد کار پانچ ہزار تک بڑھائینگے صوبے میں اب تک کل کیسز کی تعداد744 ہے جبکہ کورونا سے صحت یاب افراد کی تعداد 145 اور 34 افراد جانبحق ہوئے ہیں۔ گزشتہ 24 گھنٹوں کے دوران صوبے میں کورونا کے نئے 47 کیسز رپورٹ ہوئے مجموعی طور پر 4ہزار تین سو پانچ افراد کے ٹیسٹ کیے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ وزیر اعلیٰ محمود خان عوام کو کورونا سے بچانے کے لیے خود میدان میں ہے۔ کورونا وائرس سے نمٹنے کے لیے فرنٹ لائن پر موجود ڈاکٹر، پیرا میڈکس، صحت عملہ، پولیس، آرمی ہمارے ہیروز ہیں جن کو قوم ہمیشہ یاد رکھے گی۔ عوام، تاجر برادری، علماء اور تمام مکاتب فکر کے لوگ صوبائی حکومت کے ساتھ کھڑی ہے اور سب نے اکھٹے ہوکر کورونا وبا کو شکست دینا ہے۔

Facebook Comments