’’5 کروڑ روپے تاوان دے کر رہا ہوا‘‘

0 155

کوئٹہ میں اغواء ہونے کے 48 دن بعد رہا ہو کر اپنے گھر واپس پہنچنے والے نیوروسرجن ڈاکٹر ابراہیم خلیل کا کہنا ہے کہ وہ 5 کروڑ روپے تاوان دینے کے بعد رہا ہوئے ہیں۔

کوئٹہ کے علاقے شہباز ٹاؤن سے گزشتہ ماہ 18 دسمبر 2018ء کو اغواء ہونے والے نیوروسرجن ڈاکٹر ابراہیم خلیل 48 روز بعد گھر واپس پہنچ گئے۔

اس سلسلے میں میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے ڈاکٹرز ایکشن کمیٹی کے چیئرمین ڈاکٹرظاہر مندوخیلنے بتایا کہ ڈاکٹر ابراہیم خلیل کا کہنا ہے کہ ان کی بازیابی کے لیے جس نےبھی کردار ادا کیا ہے میں ان کا شکریہ ادا کرتا ہوں۔

چیئرمین ڈاکٹرز ایکشن کمیٹی کا کہنا ہے کہ ڈاکٹر ابراہیم خلیل نے بتایا ہے کہ وہ تاوان دے کر رہا ہوئے ہیں، ڈاکٹر ابراہیم خلیل کے بقول وہ 5 کروڑ روپے کے لگ بھگ تاوان دے کر واپس آئے ہیں۔

ڈاکٹر ظاہر مندو خیل کا مزید کہنا ہے کہ ڈاکٹرابراہیم خلیل نے بتایا ہے کہ ان پر اس دوران تشدد کیا گیا، انہوں نے بہت مشکل وقت گزارا، حکومت نے ڈاکٹر ابراہیم خلیل کی بازیابی میں کوئی کردار ادا نہیں کیا۔

انہوں نے بتایا کہ ڈاکٹر ابراہیم خلیل کے مطابق انہیں گزشتہ شام کراچی میں چھوڑا گیا، وہاں سے وہ کوئٹہ پہنچے۔

ڈاکٹر ظاہر مندو خیل نے مطالبہ کیا کہ آئندہ ڈاکٹروں کے تحفظ کے لیے مؤثر اقدامات کیے جائیں، ہم نے ڈاکٹر ابراہیم کے اغواء پر صبر و تحمل کا مظاہرہ کیا ہے، آئندہ ایسا نہ ہو کہ ڈاکٹرز انتہائی قدم اٹھانے پر مجبور ہوں۔

ڈاکٹر ابراہیم خلیل کے بھتیجے محمد عمر کا بھی اس حوالے سے بیان سامنے آیا تھا جس میں انہوں نے بتایا کہ ڈاکٹر ابراہیم خلیل کو اغوا کاروں نے کراچی میں چھوڑا تھا جس کے بعد وہ آج کراچی سے بذریعہ پرواز کوئٹہ پہنچے ہیں۔

نیورو سرجن ڈاکٹر ابراہیم خلیل کے اغوا ہونے کے بعد سے ڈاکٹرز ایکشن کمیٹی اور دیگر ڈاکٹروں کی تنظیموں کی جانب سے ان کی بازیابی کے لیے کوئٹہ بھر کے اسپتالوں میں او پی ڈیز کا مسلسل بائیکاٹ کیا جا رہا تھا۔

Facebook Comments