ملک بھر میں حالیہ دنوں میں الائچی کی قیمتوں میں جو ہوش رُبا اضافہ

0 244

جمرود(بیورو رپورٹ)ملک بھر میں حالیہ دنوں میں الائچی کی قیمتوں میں جو ہوش رُبا اضافہ ہوا ہے اس کی وجہ سے اب بہت سارے لوگوں نے اس کا استعمال ترک کر دیا ہے۔لاچی کی دو اقسام ہیں جو ایک قسم کا کالا لچی ہو تا ہے جن کو لوگ خاص طور پر چاول اور دوسرے کھانوں میں ذائقہ کے لئے ڈالتے ہیں اور دوسرے قسم کے الائچی وہ ہوتے ہیں جو لوگ اس کو زیادہ تر قہوہ میں ڈالتے ہیں اور اس کے تین اقسام ہوتے ہیں ایک سبز قسم کا دوسرا زد اور تیسرا سفید قسم کا ہوتا ہے اس میں سبز لاچی اس دوسرے لاچیوں سے قدرے مہنگا ہوتا ہے کیونکہ لوگوں کے خیال میں اس کی خوشبو بھی زیا دہ ہو تا ہے اور یہ تازہ بھی ہوتا ہے۔لاچیوں میں ٹھنڈک سا ہوتا ہے جیسا کہ میھتول میں ہوتا ہے اور اس کی الگ قسم کی خوشبو بھی ہوتی ہے اس لئے لوگ اس کو کچا بھی چھوبا لیتا ہے اور اس کو ذائقہ اور خوشبو کے لئے کھانے پینے کی اشیاء میں بھی ڈال کر کھاتے اور پیتے ہیں بصورت اس کا اور کوئی خاص فائدہ نہیں ہوتا ہے لیکن پھر بھی اس ا لائچیوں کی قیمتوں میں ریکارڈ تھوڑ اضافہ ہوا ہے جن کا خریدنا اب لوگوں کی پہنچ سے باہر ہو گیا ہے کیونکہ اس وقت مارکیٹ میں سبز الائچی کی قیمت فی کلوگرام دس ہزار روپے تک پہنچ گیا ہے جبکہ زد اور سفید الائچی کی قیمت اٹھ ہزار روپے فی کلوگرام ہے ہے اور کالا الائچی چوبیس سو میں فی کلوگرام فروخت ہوتا ہے۔اور یہی وجہ ہے کہ بہت سے دُکانداروں نے الائچی کی فروخت بند کردی ہے۔اس کے بارے میں جمرود بازار کے ایک دُکاندار رحیم شاہ نے بتایا کہ انہوں نے اب الائچی کی فروخت بند کردی ہے کیونکہ اس میں اب کوئی مارجن نہیں ہے اور اس پیسے زیادہ بند ہو جاتے ہین لیکن خریدنے والے اب نہ ہونے کے برابر ہے کیونکہ پانچ سو سے کم ملتا ہی نہیں ہے انہوں نے کہا کہ یہ باہر سے آتا ہے اور اس پر آج کل ٹیکس بھی زیادہ لگایا گیا ہے اس لئے اس کی قمیتوں میں ڈھائی فی صد کا اضافہ ہوا ہے کیونکہ اس کی قیمت آج سے دو تین مہینے پہلے تین ہزار روپے فی کلوگرام تھا اور آج کی قیمت دس ہزار اور اٹھ ہزار فی کلوگرام ہے۔انہوں نے یہ بھی کہا کہ الائچی کی قیمتیں اور بھی بڑھ جائینگی۔

Facebook Comments