مسلہ کشمیرپاکستان اور بھارت کے درمیان کوئی زمین کا تنازعہ نہیں ہے

0 124

لندن(صباح نیوز): صدرآزاد جموں وکشمیر سردار مسعود خان نے کہا ہے کہ مسلہ کشمیر ایک حقیت ہے پاکستان اور بھارت کے درمیان کوئی زمین کا تنازعہ نہیں ہے۔ مسلہ کشمیری کشمیریوں کی خواہشات اورامنگوں کے مطابق حل طلب ہے ۔بھارت جس راستے پر چل رہا ہے وہ خطرناک ہے۔
صدر آزاد جموں وکشمیر سردار مسعود خان نے یوم یکجہتی کشمیر کے حوالے سے کونٹری ویسٹ مڈلینڈ میں یکجہتی کشمیر کانفرنس سے خطاب کیا اس موقع پرتحریک کشمیر یورپ کے صدر محمدغالب ،تحریک کشمیر برطانیہ کے راجہ فہیم کیانی، کشمیری رہنما الطاف احمد بٹ ،راجہ اصغر ڈاٹر آف کشمیر کی چیئر پرسن زبیدہ خان، چوہدری اللہ دتہ، راجہ مبار ک کیانی، برسٹر شبیر، چوہدری محمد عارف اور دیگر رہنمائوں بھی خطاب کیا ۔
صدر آزاد جموں وکشمیر سردار مسعود خان نے کہا ہے کہ بھارت ایک ایٹمی قوت کو جنگ کی دھمکیاں دئے رہا ہے نتائج کا ذمدار بھارت خود ہوگا ۔انہوں نے کہا کہ بھارت نے نہتے کشمیریوں کو گذشتہ چھ ماہ سے گھروں میں محصور کر کے پورے کشمیر کو جیل خانے میں تبدیل کر رکھا ہے۔ اس کے باوجود مظلوم و محکوم کشمیر عوام آزادی حاصل کرنے کے لیے پُر عزم ہیں اور بھارت کے سامنے ہتھیار ڈالنے کے لیے تیار نہیں۔
انہوں نے اورسیز کشمیری اور پاکستانی کمیونٹی تحریک کشمیر یورپ کے صدر محمدغالب برطانیہ کے راجہ فہیم کیانی کی سفارتی محاذ پر کوششوں کو سہراتے ہوئے کہا کہ انہوں نے مسلہ کشمیر کو یورپ کے ایوانوں میں پہنچانے میں بڑا کلیدی کردار ہے۔ دو سال پہلے ڈنمارک میں بھی تحریک کشمیر ڈنمارک کے زیر اہتمام ڈینش پارلیمنٹ میں بھی بڑی منظم کانفرنس منعقد کی گی تھی ۔ الطاف احمد بٹ نے کہا کہ مقبوضہ کشمیر کے عوام نے ان مشکل اور نا مسائد حالات میں بھی اپنی جد و جہد کو جارہی رکھا ہوا ہے ۔
بھارت کشمیریوں کی نسل کشی کر رہا ہے گذشتہ چھ ماہ سے حالات انتہاتی سنگین صور حال اختیار کر چکے ہیں ۔انسانی حقوق کی پامالیوں میں اضافہ انسانی تاریخ میں بہت بڑا المیہ ہے ۔۔ تحریک کشمیر یورپ کے صدر محمد غالب نے کہا کہ پاکستان نے مسلہ کشمیر کے پُرامن حل کے لیے بڑی کوششیں کی ہیں۔ بھارت مسلسل ہٹ دھرمی کا مظاہرہ کر رہا ۔ تحریک کشمیر برطانیہ کے صدر راجہ فہیم کیانی نے کہا ہے بھارت کی ریاستی دہشتگردی کو مغرب میں مسلسل بے نقاب کرتے رہیں گے کشمیری اور پاکستانی کمیونٹی کی تحریک آزادی کے وابستگی بھارت پر دبائو بڑھتا جارہا ہے کہ مودی آمن کا راستہ اختیار کرئے۔

Facebook Comments