محکمہ صحت میں بھرتیوں کے دوران ہونے والی مبینہ اقربا پروری اور بے قاعدگیوں کے بارے میں تشویش کا اظہار۔چیئرپرسن ڈاکٹر سمیرا شمس

0 95

پشاور(صوبائی اسمبلی) خیبرپختونخوا اسمبلی کی سٹینڈنگ کمیٹی برائے صحت کی چیئرپرسن ڈاکٹر سمیرا شمس ایم پی اے نے محکمہ صحت میں بھرتیوں کے دوران ہونے والی مبینہ اقربا پروری اور بے قاعدگیوں کے بارے میں تشویش کا اظہار کرتے ہوئے کہا ہے کہ وہ ہر طرح کی قانونی خلاف ورزی کو روکنے کی بھرپور کوشش کرے گی۔ انہوں نے محکمہ صحت کے حکام کو خبر دار کیا کہ ان کی کمیٹی بھرتیوں کے معاملات کا باریک بینی کے ساتھ جائزہ لیں گی اور اگر ان میں کسی طرح کی بھی بے قاعدگی پائی گئی تو متعلقہ حکام کو اس کا زمہ دار ٹھرایا جائے گا۔
ڈاکٹر سمیرا شمس نے ایم پی اے ہمایون خان کی نشان دہی پر محکمہ صحت دیر تیمرگرہ میں 30 آسامیاں مشتہر کرنے اور اس کی جگہ 53 افراد کو بھرتی کرنے کے بارے میں استفسار کیا انہوں نے متعلقہ حکام کو ہدایت کی کہ وہ اس معاملے کا آئندہ اجلاس میں وضاحت کریں بصورت دیگر اس سلسلے میں سخت کاروائی عمل میں لائی جائے گی انہوں نے ایم پی اے ادریس خان کی نشان دہی پر نوشہرہ میڈیکل کالج میں 20 افراد کے بھرتیوں میں مبینہ اقربا پروری کے الزامات کے بارے استفسار کرتے ہوئے کہا کہ وزیر اعظم عمران خان نے عوامی نمائندوں پر سخت پابندی عائد کی ہے جبکہ سرکاری ملازمین کے بارے میں ہوش ربا قصے سننے کو مل رہے ہیں۔یا د رہے کہ نوشہرہ میڈیکل کے ڈین محمد جہانگیر پر اپنے عزیز اقارب کی ایک بڑی تعداد بھر تی کرنے کا الزام ہے۔ انہوں نے نوشہرہ میڈیکل کالج کے ڈین محمد جہانگیر کو ہدایت کی کہ وہ ایم پی اے ادریس خان کو مبینہ الزامات کے بارے تفصیلی رپورٹ پیش کریں جو کمیٹی کے آئندہ اجلاس میں بھی پیش کی جائے۔انہوں نے کہا کہ فوت شدہ ملازمیں کے کوٹہ کے بارے میں آئندہ اجلا س میں تفصیلی رپورٹ پیش کرنے کی بھی ہدایت کی۔انہوں نے کہا کہ ان کی کمیٹی معاملات میں شفافیت لانے کی بھر پور کوشش کررہی ہے اور اس سلسلے میں محکمہ صحت کے حکام سے بھر پور تعاون کی توقع ہے۔اجلاس میں اراکین صوبائی اسمبلی ہمایون خان،لیاقت خان،صاحبزادہ ثناء اللہ خان،محمد ادریس خان، ڈاکٹر ا ٓسیہ اور محکمہ صحت کے حکام نے بڑی تعداد میں شرکت کی۔

Facebook Comments