علاج میں خود بھی کروا سکتا ہوں، نواز شریف اور بلاول بھٹو کی ملاقات کی اندرونی کہانی سامنے آ گئی

0 175

لاہور ( این این آئی) سابق وزیراعظم و پاکستان مسلم لیگ (ن ) کے قائد محمد نواز شریف نے کہا ہے کہ حکومت کچھ بھی کرلے جیل مجھے نہیں توڑ سکتی،یہ لوگ میرا علاج کرائیں تماشا تو نہ بنائیں، مجھے ہسپتال لے جایا جاتا ہے ،بلڈ پریشر اور بلڈ ٹیسٹ کروا کر واپس جیل لے آتے ہیں ۔میڈیا رپورٹس میں ذرائع کے حوالے سے بتایا گیاکہ بلاول بھٹو اور نواز شریف ملاقات کیاندرونی کہانی سامنے آگئی ہے۔ ذرائع کے مطابق نواز شریف اور بلاول کی ملاقات ایڈیشنل جیل سپریٹنڈنٹ کے کمرے میں ہوئی ، ایڈیشنل سپریٹنڈنٹ اور ڈپٹی سپریٹنڈنٹ بھیپوراوقت ملاقات میں موجود رہے ۔نواز شریف سے ملاقات کرنے والوں کی شکر والی چائے سے تواضع کی گئی۔ذرائع کے مطابق نواز شریف با اعتماد تھے۔بلاول بھٹو زرداری نے نواز شریف سے کہا کہ میاں صاحب آپ تین بار کے وزیر اعظم ہیں یہ زیادہ دیر آپ کو بند نہیں رکھ سکتے، امید ہے اگلی ملاقات جیل سے باہر ہوگی۔ جس پر نواز شریف نے ہنس کر جواب دیا کہ یہ بھی کہہ دیں یہ ملاقات جلد سے جلد ہو۔یہ کچھ بھی کرلیں جیل مجھے نہیں توڑ سکتی۔بلاول بھٹو نے نواز شریف کو این آئی سی وی ڈی میں علاج کی پیشکش کرتے ہوئے کہا کہ میاں صاحب سندھ حکومت این آئی سی وی ڈی میں عالمی معیار کا علاج کرانے کو تیار ہے۔ اس پر نواز شریف نے جواب دیا کہ علاج تو میں خود بھی کروا سکتا ہوں حکمران اجازت تو دیں، یہ لوگ میرا علاج کرائیں میرا تماشہ تو نہ بنائیں، مجھے ہسپتال لے جایا جاتا ہے بلڈ پریشر اور بلڈ ٹیسٹ کروا کر واپس جیل لے آتے ہیں علاج نہیں کراتے۔نواز شریف نے بلاول سے کہا کہ ہم نے جو غلطیاں کیں سو کیں، اب غلطی کی کوئی گنجائش نہیں ۔

Facebook Comments