صوبائی کھیلوں کی ایسوسی ایشنزنے کے پی اولمپک کے آئین میں خودساختہ ترامیم کوغیرآئینی قراردیدیا

0 104

پشاور(سپورٹس رپورٹر)صوبائی کھیلوں کی ایسوسی ایشنزنے خیبرپختونخوا اولمپک ایسوسی ایشن کے آئین میں خودساختہ ترامیم کوغیرآئینی قراردیتے ہوئے اسکی منظوری کے طریقہ کار کو بوگس،من گھرٹ قراردیتے ہوئے پاکستان اولمپک ایسوسی ایشن سے اس معاملے میں مداخلت کرنے کا مطالبہ کیاہے،بصورت دیگر عدالت کا دروازہ کھٹکٹھایاجائے گاان خیالات کا اظہارپی اواے کی پبلک ریلیشن آفیسر خالد نور نے پشارمیں میڈیاسے بات چیت کرتے ہوئے کیااس موقع پرصوبائی ہاکی ایسوسی ایشن کے سیکرٹری ظاہر شاہ،صوبائی ویٹ لفٹنگ ایسوسی ایشن کے سیکرٹری شیرازمحمد،صوبائی باڈی بلڈنگ ایسوسی ایشن کے سیکرٹری طارق پرویز ،صوبائی ٹیبل ٹینس ایسوسی ایشن کے سیکرٹری کفایت اللہ ،صوبائی جوڈو ایسوسی ایشن کے سیکرٹری نعیم جان اور صوبائی جوجیٹسو ایسوسی ایشن کے سیکرٹری تحسین اللہ بھی موجود تھے انہوںنے تفصیلات سے آگاء کرتے ہوئے کہاکہ31دسمبر2019کوخیبرپختونخوااولمپک ایسوسی ایشن کاالیکشن اجلاس مقامی ہوٹل میں تین بجے بلایاگیاتھاجبکہ تمام ایسوسی ایشن وہاں بمعہ نمائندگی تشریف لائے توعین اس وقت کے پی اوکے صدرعاقل شاہ نے ہاوس سے درخواست کی کہ یہ الیکشن میٹنگ نہیں ہوسکتی کیونکہ ہم نے ترمیمی آئین تین سال قبل جوبنایاتھا اس کی منظوری جنرل کونسل میں نہیں لی گئی تھی جبکہ تقریبا ًتین سالوں میں د س مرتبہ جنرل کونسل کی میٹنگ ہوئی تھی اب پہلے اس کی منظوری ہوگی توپھرالیکشن کرائے جائیںگے دس جنوری 2020کوخیبرپختونخواء اولمپک ایسوسی ایشن کی چارسالہ مدت ختم ہوچکی ہے ایک خط نمبر111kpoa/con2020 بتاریخ 14/1/2020کوذولفقاربٹ کی جانب سے جاری کیاگیاکہ دوفروری کواجلاس بلایاگیاکہ جو نیاقانون کامسودہ تیارکیاگیاہے اس پرآپ لوگوں کی رائے ،تجاویز اورخدشات پربات چیت کی جائے گی، اس سے قبل 13ایسوسی اییشنزنے اپنی تجاویز ،خدشات سے پہلے سے ہی پی اواے کواگاء کردیاتھادوفروری کی بیٹھک میں بجائے اس کے کہ عاقل شاہ یاذوالفقاربٹ یاجس نے آئین کومرتب کیاتھا اس کاچیئرمین ان خدشات،تجاویز وآراء کاجواب دہ تھے عاقل شاہ نے براہ راست کہاکہ میں ڈکٹیڑ ہوںدوبارہ اوربارباردہرایاکہ میں ایک ڈکٹیٹرہوں جوکوئی جوکچھ کرسکتاہے کرلیںپھر چند لوگوں سے بدتمیزی پراتریاجو کہ اخلاقیات سے گری ہوئی باتیں تھیں جس کویہاں کسی بھی طرح بیان نہیںکیاجاسکتاہے اوراس حرکت سے انہوںنے سپورٹس کابھی جنازہ نکال دیااوریہ بیٹھک درحقیقت ایک ناکام ،بدانتظامی کاشکارہوئی۔انہوں نے بتایاکہ8فروری کوایک پریس کانفرنس طلب کی جائے گی جس میں تمام ترحقائق سے پردہ اٹھایاجائے گاجس میں کے پی اوکی چارسالہ کارکردگی ،تجاویز،خدشات ،ممبران کی رائے آئین وقانون کی روشی میں واضع کی جائے گی اورپریس کانفرنس میں یہ ایک قانونی مسئلہ ہے تواس کی تشریح ازحد ضروری ہے پاکستان اولمپک سے کچھ وضاحیتں بھی طلب کی جائینگی اورمزید ضرورت محسوس ہوئی توعدالت عالیہ سے بھی رجوع کریں گے

Facebook Comments