سپریم کورٹ آٹا اور چینی بحران پیدا کر کے اربوں لوٹنے والوں کے خلاف از خود نوٹس لے،سینیٹر سراج الحق

0 100

لاہور(صباح نیوز): امیر جماعت اسلامی پاکستان سینیٹر سراج الحق نے کہاہے کہ سابق حکمران کرپشن کرتے تھے ، یہ ہڑپشن کر رہے ہیں ۔ ہڑپشن کرپشن کی بھی ماں ہے ۔ سپریم کورٹ آٹا اور چینی بحران پیدا کر کے اربوں لوٹنے والوں کے خلاف از خود نوٹس لے ۔
حکمران کہتے ہیں کہ ہم بوٹ والی سرکار کے بندے ہیں ان حکمرانوں کی پشت پر عوام نہیں نہ اس حکومت کو جمہوری حکومت کہا جاسکتا ہے ۔ حکمرانوں کی کرپشن اور مہنگائی کے خلاف ملک بھر میں عوامی عدالتیں لگائیں گے ۔ کرپشن میں اضافے پر ٹرانسپرنسی انٹر نیشنل کی رپورٹ” پڑھتا جا شرماتا جا ” ۔ عالمی اداروں نے حکومتی دعوئوں کا پو ل کھول دیاہے ۔
ملک میں کرپشن بڑھی او ر جمہوریت کم ہوئی ہے ۔ پاکستان کرپشن میں تین درجے ترقی کر گیا ۔ کرپشن کے خاتمے اور احتساب کے بلند و بانگ دعوے کرنے والے وزیراعظم کی آنکھیں کھولنے کے لیے عالمی اداروں کی رپورٹیں کافی ہیں ۔ حکومت کی اپنی صفوں میں کرپشن کے کنگز موجود ہیں ، وزراء ایک دوسرے کو زیادہ کرپٹ ہونے کے طعنے د ے رہے ہیں ۔ کرپشن سابقہ ادوار میں بھی ہوتی رہی مگر موجودہ حکومت نے تو ریکارڈ توڑ دیے ۔ اب تو جائز کاموں کے لیے بھی رشوت لی جاتی ہے۔ ملک میں مہنگائی ،بے روزگاری اور مایوسی مسلسل بڑھ رہی ہے ۔ حکومتی دعوئوں پر اب کوئی بھی کان دھرنے کو تیار نہیں ۔ پاکستان کو ریاست مدینہ کی طرز پر اسلامی و فلاحی مملکت دینی قوتیں اور علمائے کرام بناسکتے ہیں ۔
تمام تر اختیارات کے باوجود عالمی فورمز پر کرپشن اور غربت کا رونا رونے والے وزیر اعظم کیا ثابت کرنا چاہتے ہیں ۔ چینی اور آٹے کا بحران پید اکر کے عوام کی جیبوں پر ڈاکہ ڈالنے والوں کو پکڑنا حکومت کی ذمہ داری ہے۔
ان خیالات کااظہار انہوںنے منصورہ میں علما ء کنونشن سے خطاب اور میڈیا کے نمائندوں سے گفتگو کرتے ہوئے کیا ۔ کنونشن سے سابق رکن قومی اسمبلی و جمعیت اتحاد العلماء پاکستان کے صدر شیخ القرآن و الحدیث حضرت مولانا عبدالمالک ، علامہ راغب نعیمی ، حافظ فضل الرحیم اشرفی ، ابتسام الٰہی ظہیر ، امیر جماعت اسلامی وسطی پنجاب مولانا جاوید قصوری اور امیر جماعت اسلامی لاہور ذکر اللہ مجاہد نے بھی خطاب کیا ۔اس موقع پر سیکرٹری اطلاعات قیصر شریف بھی موجود تھے ۔سینیٹر سراج الحق نے کہاکہ علمائے حق انبیاء کے مشن کے اصل وارث ہیں اور معاشرے میں ان کا عزت و احترام اور ا علیٰ مقام ہے ۔

Facebook Comments