سعودی عرب میں کفیل سسٹم کا خاتمہ نہایت قریب،

0 129

سعودی عرب کی سرکاری اخبار سعودی گزٹ کی تازہ رپورٹ کے مطابق سعودی عرب کے وژن 2030 کے مطابق پچھلے سال مئی میں مملکت سے کفالت سسٹم کے خاتمے کا اعلان کیا گیا تھا، جس کو مزید اپروول اور منظوری کے لئے شوری اور کابینہ کونسل میں بھجوا دیا گیا تھا،
ایک سال ڈیییٹ کے بعد تازہ ترین اطلاعات یہ ہیں کہ اب اس سسٹم کو مکمل طور پر ختم کرنے کا فیصلہ کرلیا گیا ہے جس کا اعلان کسی بھی وقت کیا جا سکتا ہے
سعودی گزٹ کے مطابق نئے اسپانسر شپ سسٹم کے تحت ورکر اور کفیل کا تعلق صرف کنٹریکٹ کی حد تک باقی رہ جائے گا جبکہ چھٹی آنے جانے کے لئے خروج و عودہ یا فائنل ایگزٹ اسٹیپ / اقامہ ری نیول اور نئے اقامہ کا اجراء مکمل طور پر ورکر کے اپنے ہاتھ میں ہوگا، اس سے جہاں ایک جانب عالمی سطح پر سعودی عرب کا امیج بہتر ہوگا تو وہیں سعودی عرب کے اندر رہنے والے غیرملکیوں کو آزادی سے رہنے اور کام کرنے کے مزید مواقع ملیں گے،
سعودی گزٹ کی رپورٹ کے مطابق گزشتہ ستر سال سے نافذ رہنے والے کفیل سسٹم پر وقتا فوقتا عالمی انسانی حقوق کے اداروں کی جانب سے کڑی تنقید سامنے آتی رہی ہے، اُس سسٹم میں اصلاحات کے باوجود بھی کہی سسٹم کو مسلسل کاروباری مقاصد کے لئے استعمال کیا جارہا تھا جس کے بعد اب گورنمنٹ نے یہ فیصلہ لیا ہے.

Facebook Comments